صفحہ اول / پاکستان / پاکستان کا کھویا ہوا مقام واپس دلائیں گے، شہباز شریف

پاکستان کا کھویا ہوا مقام واپس دلائیں گے، شہباز شریف

کراچی ۔ اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ(پی ڈی ایم)کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان مسلم لیگ (ن)کے صدر اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے کہا کہ نواز شریف نے کراچی میں برسوں سے جاری بدامنی اور بھتہ خوری کو ختم کرکے شہر کا امن بحال کیا جبکہ عمران خان کی جھوٹی اور کرپٹ حکومت کے سیاسی خاتمے کےلیے لاکھوں عوام کے ساتھ اسلام آباد جانا پڑے گا، نواز شریف نے کراچی میں برسوں سے جاری بدامنی اور بھتہ خوری کو ختم کرکے شہر کا امن بحال کیا.

عمران خان نے سندھ اور کراچی کی محرومیوں کے خاتمے کے لئے کچھ نہیں کیا ، نواز شریف نے 20،20گھنٹوں کی لوڈ شیڈنگ کا خاتمہ کیا ،عمران خان دن رات جھوٹ بولتا ہے،یہ وہی شخص ہے جو کنٹینر پر کھڑے ہو کر کہتا تھا کہ روپیہ ڈالر کے مقابلے میں ایک روپے گر جائے تو سمجھو کہ وہ وزیراعظم کرپٹ ہے، بجلی کے بل میں اضافہ ہوجائے تو وزیراعظم کرپٹ ہے، لوگوں کو مہنگائی سے واسطہ پڑے تو حکومت کرپٹ ہے، ہم مل کر پاکستان کے اندر فلاحی ریاست بنائیں گے اور پاکستان کا کھویا ہوا مقام واپس دلائیں گے.

شہباز شریف نے مزید کہا کہ بلوچستان کے رہنماﺅں نے وہاں کی محرومیوں کی بات کی، اس پر پی ڈی ایم اور ہمارے قائد نواز شریف اور مسلم لیگ (ن)ان کے ساتھ ان کے معاشی، سماجی اور قانونی حقوق دلانے کے لیے ساتھ دے گی اور کھڑی ہے.

انہوں نے کہا کہ سلیکٹڈ وزیراعظم عمران خان جب 2019میں کراچی آئے تو 162 ارب روپے کے ترقیاتی پروگرام کا اعلان کیا تھا اور پھر 2020میں جب شدید بارشیں ہوئیں اور سیلاب آگیا تھا تو پھر عمران خان نے 1100ارب روپے بڑا پیکیج کا اعلان کیا تھا،ان کا کہنا تھا کہ مجھے بلاول بھٹو نے بتایا کہ اس 1100ارب کے منصوبے میں حکومت سندھ نے خطیر رقم لگائی ہے لیکن عمران خان نے سندھ اور کراچی کی محرومیوں کے خاتمے کے لئے کچھ نہیں کیا اور جھوٹے وعدوں پر عوام کو ٹرخایا جارہا ہے.

شہباز شریف نے عوام کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ کو یاد ہوگا جب اس شہر میں بھتہ خوری عروج پر تھی، بند بوری پر لاشیں ملتی تھیں، پرچیاں جاتی تھیں کہ کروڑوں روپے فلاں کو دے دو، خوف کا ماحول تھا اور لوگ پنجاب منتقل ہونا شروع ہوئے اور کاروباری لوگوں نے اپنے خاندان دبئی منتقل ہوئے، پھر نواز شریف نے شہر اور ملک کے اندر تمام اداروں، یہاں کی حکومت کے ساتھ مل کر اور کاروبارحضرات کے مشورے کے ساتھ ایک مربوط منصوبہ بنایا، پھر آپ نے دیکھا کراچی میں امن و امان کی جو تباہ حال صورت حال تھی، اس کو نواز شریف نے وہ امن واپس لوٹایا اور وہ خاندان واپس کراچی آگئے اور آج کراچی میں بھتہ خوری کا خاتمہ ہوچکا ہے، بند بوریوں میں لاشیں اب نہیں آتیں.

قائد حزب اختلاف نے کہا کہ یہ وہی نواز شریف ہیں جنہوں نے 20،20گھنٹوں کی لوڈ شیڈنگ کا خاتمہ کیا جبکہ اس سے قبل لوڈ شیڈنگ عروج پر تھی، پنکھا بند ہوتا تھا، لوگ ذہنی طور پر مفلوج ہوگئے تھے، کاروبار ٹھپ تھا، لاکھوں لوگ بے روزگار ہوچکے تھے،ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی معیشت تباہی کے دہانے پہنچ چکی تھی لیکن اللہ کے کرم سے پاک چین اقتصادی راہداری(سی پیک)اور پاکستان کے اپنے وسائل سے اربوں ڈالر خرچ کرکے پاکستان میں 5سال میں 11ہزار میگاواٹ بجلی مہیا کی گئی.

انہوں نے کہا کہ آج کراچی کی روشنیاں واپس آگئی ہیں اور پاکستان کے اندر صنعتیں دوبارہ چل پڑی ہیں، بجلی نہ ہونے کی وجہ سے جو روزگار لوگوں سے چھن گیا تھا اس کو نواز شریف کی قیادت میں یہ حقیر خدمات دی گئیں،شہباز شریف نے کہا کہ کراچی اور سندھ کے عوام آپ کو اس کے حوالے سے اچھی طرح علم ہے لیکن آج یہ عمران خان دن رات جھوٹ بولتا ہے، دروغ گوئی کرتا ہے، یہ وہی شخص ہے جو کنٹینر پر کھڑے ہو کر کہتا تھا کہ روپیہ ڈالر کے مقابلے میں ایک روپے گر جائے تو سمجھو کہ وہ وزیراعظم کرپٹ ہے، بجلی کے بل میں اضافہ ہوجائے تو وزیراعظم کرپٹ ہے، لوگوں کو مہنگائی سے واسطہ پڑے تو حکومت کرپٹ ہے.

شہباز شریف نے کہا کہ آج کیا چینی سستی ہوئی، کیا آٹا سستا ہوا، بجلی سستی ہوئی، گیس سستی ہوئی، ہر چیز اس وقت آسمان سے باتیں کر رہی ہے، عمران خان تو ساڑھے 300کینال میں بیٹھ کر ریاست مدینہ کی بات کر رہے ہیں، اس سے بڑی اور کوئی خطا ہو نہیں ہوسکتی، حضرت عمر اور حضرت علی، حضرت عثمان اور حضرت ابوبکر کا زمانہ دیکھیں کہ کوئی بھوکا نہیں سوتا تھا اور کس طرح انصاف ملتا تھا لیکن یہ شخص آج لوگوں کو گمراہ کر رہا ہے.

انہوں نے کہا کہ آج ملک میں کروڑوں لوگ تباہ حال ہیں اور مہنگائی نے ان کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے، اس عمران خان کو کیا پتہ جو اس محل میں رہتا ہے اور روز اپنے گھر سے دفتر ہیلی کاپٹر میں جاتا ہے، اس کو کیا پتہ ہوگا کہ لانڈھی، مہران کی وادیوں، بلوچستان کی سنگلاخ پہاڑوں، کے پی کے برف پوش اور پنجاب کے میدانوں میں غریب خاندان کس طور اپنی زندگی گزار رہا ہے.

شہباز شریف نے کہا کہ خود نمائی نہیں کر رہا لیکن یہی وہ نظام ہے اور اگر عوام نے ہمیں موقع دیا، پی ڈی ایم کو موقع دیا تو یہ مہنگائی ختم ہوجائے گی، ملک کے اندر روزگار ہوگا، تعلیم اور علاج کی سہولتیں ملیں گی،انہوں نے کہا کہ یہ بات صرف تقریر کے لیے نہیں کر رہا بلکہ آپ نے عملی نمونہ آپ دیکھ چکے ہیں، شاید کراچی میں نہیں تھا لیکن پاکستان مسلم لیگ (ن)کے پاس پنجاب کا صوبہ تھا تو وہاں پر علاج مفت تھا، کروڑوں کی ادویات غریبوں کو مفت میں میسر تھیں.

انہوں نے کہا کہ تعلیم کے لیے لیپ ٹاپ دیے جاتے تھے، غریبوں کو تعلیم کے لیے وظائف دیے گئے، آج وہ ڈاکٹر اور انجینئر بن کر عوام کی خدمت کر رہے ہیں، ہم نے لاہور میں پہلی میٹرو 2012میں بنائی تھی لیکن پہلا حق کراچی کا تھا، یہ شہر کمائی کا مرکز اور بندرگاہ ہے، پاکستان کے لیے 68فیصد سرمایہ دیتا ہے اور کراچی نے ماں کی گود کی مانند پورے پاکستان کو اپنی گود میں سما رکھا ہے.

انہوں نے کہا کہ ہم نے 72برسوں میں اس شہر کے ساتھ سوتیلی ماں کا سلوک کیا ہے، اس طرح نہیں ہوگا، پی ڈی ایم کو اگر موقع ملا تو ہم مل کر پاکستان کے اندر فلاحی ریاست بنائیں گے اور پاکستان کا کھویا ہوا مقام واپس دلائیں گے،شہباز شریف نے کہاکہ قائداعظم کی قیادت میں ہمارے آبا و اجداد خون کا دریا عبور کر کے یہاں اس لیے نہیں آئے کہ چھینا جھپٹی ہو، ناانصافی ہو، اس لیے نہیں کہ عمران خان نیازی جیسا جھوٹا شخص مسلط ہو، دن رات جھوٹ بولے، مہنگائی کرے، ملک میں غربت، بے روزگاری لائے اور کہے میں ایک کروڑ نوکریاں اور 50لاکھ گھر دوں گا لیکن نوکریاں اور گھر بھی جارہے ہیں.

شہباز شریف نے کہا کہ ہمیں یہ طے کرنا ہے کہ اس مہنگائی کا طوفان روکنے کے لیے عوامی ریلا لے کر جانا ہوگا اور اسلام آباد میں اس کو خس و خاشاک کی طرح بہانا ہوگا،انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمن قیادت کریں گے اور ہم سب لاکھوں کے ساتھ مل کر مہنگائی کو دفن کرنے کے لیے اس جھوٹی اور کرپٹ حکومت کو سیاسی طور پر دفن کرنے کے لیے جائیں گے اور اللہ کو منظور ہوا تو یہ ہو کر رہے گا۔

٭۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: قلب نیوز ڈاٹ کام ۔۔۔۔۔ کا کسی بھی خبر اورآراء سے متفق ہونا ضروری نہیں. اگر آپ بھی قلب نیوز ڈاٹ کام پر اپنا کالم، بلاگ، مضمون یا کوئی خبر شائع کر نا چاہتے ہیں تو ہمارے آفیشیل ای میل qualbnews@gmail.com پر براہ راست ای میل کر سکتے ہیں۔ انتظامیہ قلب نیوز ڈاٹ کام

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے